Poetry

phul kaliyan bhi hum bichhaenge | Azeem Kamil

Spread the love

پھول کلیاں بھی ہم بچھائیں گے
دل کی دھرتی کو یوں سجائیں گے

ہجر کاٹیں گے اور خوشی کے ساتھ
ایک دو یار بھی بنائیں گے

پیار آفت ہے اِس زمانے میں
ہر نئے شخص کو بتائیں گے

منتیں بعد میں کریں گے تری
پہلے تھوڑا سا حق جتائیں گے

اپنے ہاتھوں میں سبز پرچم ہے
امن کے گیت گنگنائیں گے

بوسہ لیں گے تری جبیں کا ہم
روٹھنے پر تجھے منائیں گے

عظیم کامل

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *