Poetry

tadapte dil ko kafi hai bas | Azeem Kamil

Spread the love

تڑپتے دل کو کافی ہے بس اتنا واہمہ رکھنا

بچھڑنے والا لوٹے گا ہمیشہ حوصلہ رکھنا

 

چلے جائیں گے ہم بھی دوستو دنیائے فانی سے

فقط اتنی گزارش ہے دعا کا سلسلہ رکھنا

 

کہ ہم بد بخت لوگوں میں بس اِک یہ ہی برائی ہے

دعائیں دیر سے لگتی ہیں جانی حوصلہ رکھنا

 

تمہیں خوشیاں مبارک ہوں ہمارے غم زیادہ ہیں

تمہیں تلقین ہے اتنی کہ ہم سے فاصلہ رکھنا

 

کہ پانی جتنا گدلا ہو بجھا دیتا ہے آتش کو

ہمارے جیسوں سے بھی یار تھوڑا واسطہ رکھنا

 

بچھڑ کر تم کہیں ملنا تو ہنس کر بات کر لینا

بجز اِس کے نہیں کوئی ہمیں بھی ضابطہ رکھنا

 

عظیم کامل

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *