Poetry

Nai sunta koi Aahen tumari | Azeem Kamil

Spread the love

نہیں سنتا کوئی آہیں تمہاری

کہانی ایک جیسی ہے ہماری

 

بگڑنا چھوڑ دو ہم سے خدارا

سبھی منظور ہیں باتیں تمہاری

 

تم اپنا فیصلہ محفوظ رکھو

یہاں ہر گز نہیں رائے شماری

 

یہاں پر درد ٹھاٹھے مارتے ہیں

یونہی بنتے نہیں ہم سے لکھاری

 

چلے جاؤ ہماری بات مانو

یہاں ہوتی رہے گی مارا ماری

 

ہمارے سامنے آئیں وہ کیسے

کہ اب رکتی نہیں ہے شرمساری

 

گھڑی سے دشمنی کچھ اِس لیے ہے

پریشانی بڑھاتی ہے تمہاری

 

کفن تم نے اُٹھا کر دیکھنا تھا

کہ آنکھیں بولنے لگتی ہماری

 

عظیم کامل

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *