Poetry

Dilun par hukmarani hai uski | Azeem Kamil

Spread the love

دلوں پر حکمرانی ہے اُسی کی

یہ  قصہ اور کہانی ہے اُسی کی

 

یہاں قبضہ نہ کرنا بھول کر بھی

یہاں بس راج دھانی ہے اُسی کی

 

کہ ہم بد بخت لوگوں میں یقیناً

یہ ساری کامرانی ہے اُسی کی

 

تبھی تو شہر سارا جا رہا ہے

مری جاں ! میزبانی ہے اُسی کی

 

یہ پھولوں کے نئے پیغام آنا

یقیناً مہربانی ہے اُسی کی

 

سبھی سے مسکرا کے بولتے ہو

یہی تو بد گمانی ہے اُسی کی

 

قبیلہ منحرف ہونے لگے تو

بتانا یہ نشانی ہے اُسی کی

 

ہمیں دھتکار کر رونے لگے گا

یہ حرکت بھی پرانی ہے اسی کی

 

عظیم کامل

Also read : Nai sunta koi Aahen tumari | Azeem Kamil

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *