Poetry

Barun ke pass betha kar | Azeem Kamil

Spread the love

بڑوں کے پاس بیٹھا کر نظریاتی بنا دیں گے

یہاں اچھا بُرا کیا ہے تمہیں سب کچھ بتا دیں گے

 

مرے نزدیک کر دو اور چلے جاؤ یہاں سے تم

یہ پودے اُس کے گھر کے ہیں مجھے بلکل شفا دیں گے

 

نصیحت کر رہا ہوں پاؤں چھونا اور دعا لینا

الجھنا مت فقیروں سے تمہیں یہ بد دعا دیں گے

 

مرے بابا تمہارے حکم سے آگے نہیں کچھ بھی

وہ لڑکی ہے اُسے چھوڑو ہم اپنی جاں لٹا دیں گے

 

محمد کے نواثے ہیں انہیں معلوم ہے سب کچھ

لگا کر لا اِلا کا نعرہ سارا کچھ لٹا دیں گے

 

عظیم کامل

Also read : Khushi se jhoomti pherti hai | Azeem Kamil

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *