Poetry

Bari Mushkil say ki thi yar himat tujh ko khonay ki Azeem Kamil

Spread the love

بڑی مشکل سے کی تھی یار ہمت تجھ کو کھونے کی

بتا کیا شرط ہے تیری زرا نزدیک ہونے کی

 

چلے آتے ہیں تیرے گاؤں جب یہ دل تڑپتا ہے

ضرورت ہی نہیں پڑتی ہے مجھ کو رونے دھونے کی

 

خوشی سے سر جھکا لیتا ہوں جب یہ یاد آتا ہے

مری ماں نے نصیحت کی تھی مجھ کو مٹی ہونے کی

 

کوئی بے چینی لاحق ہے کہ آنکھیں بند بھی کر لوں

دوائی لینی پڑتی ہے مجھےکچھ دیر سونے کی

 

تمہارے بعد اِس دل میں نہیں آیا کوئی بھی شخص

نہیں ہمت بچی کامل اذیت اور ڈھونے کی

عظیم کامل

Also read : Barun ke pass betha kar | Azeem Kamil

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *