Poetry

us ne aik geet gungunaya tha | Azeem Kamil

Spread the love

اُس نے اِک گیت گنگنایا تھا

جو مجھے آنکھ سے سنایا تھا

 

چوڑیاں بعد میں اُتاریں تھیں

پہلے اُس نے مجھے ستایا تھا

 

اُس نے رو کر کہا تھا میرے ہو

خود کو ہر ایک سے بچایا تھا

 

ہم کبھی ایک ہو نہیں سکتے

اِتنا کہہ کر گلے لگایا تھا

 

رونے میں عمر کاٹ دی اُس نے

پھر کہیں جا کے مسکرایا تھا

 

عظیم کامل

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *