Poetry

Baad me ja kr sher suna’na hota hy | Azeem Kamil

Spread the love

بعد میں جا کر شعر سنانا ہوتا ہے

پہلے تو ماحول بنانا ہوتا ہے

Baad me ja kr sher suna’na hota hy

Pehly to maahoul bna’na hota hy

تب تک تیرے نام کا کلمہ پڑھتے ہیں

جب تک سانس کا آنا جانا ہوتا ہے

Tab tak tere naam ka kalma parhty hen

Jub tak sans ka ana jana hota hy

تیری یاد کے در پر دستک دیتا ہوں

پلکوں پر جب اشک بلانا ہوتا ہے

Teri yaad ky dar pr dastak deta hun

Palkon pr jub ashk bulana hota hy

اِس دنیا میں آکر اُتنا جیتے ہیں

جس کا جتنا آب و دانہ ہوتا ہے

Es dunia me Akar utna jetay hen

Jis ka jitna Aab-O-dana hota hy

جب تک تیز ہوائیں چلتی رہتی ہیں

پیڑوں کو تو شور مچانا ہوتا ہے

Jub tak tez hawain chalti rehti hen

Peron ko to shoor machana hota hy

باغ میں اپنا ملنا ایسے ہے جیسے

پھولوں کو گلدان میں لانا ہوتا ہے

Baagh me apna milna aysy hy jesy

Pholon ko guldaan me lana hota hy

اپنے دل کی حالت چاہے جیسی ہو

لوگوں کو کچھ اور بتانا ہوتا ہے

Apny dil ki halat chahy jesi ho

Logon ko kuch aur btana hota hy

اُن کا پیچھا کرنا بھی آسان نہیں

سائے کا کردار نبھانا ہوتا ہے

Un ka peecha krna bhi Aasan nhi

Peron ka kirdaar nibhana hota hy..

عظیم کامل ۔۔۔۔۔

Azeem Kamil

Also read : Main us sy kab ka Aagay aa gya tha | Azeem Kamil

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *