Poetry

Khud se chal Inteqam lete hain | Azeem Kamil

Spread the love

خود سے چل انتقام لیتے ہیں

دل سے پتھر کا کام لیتے ہیں

 

ہم تجھے حفظ کر چکے یعنی

ہر گھڑی تیرا نام لیتے ہیں

 

مفت اقرار بھی نہیں کرتے

ہم محبت کے دام لیتے ہیں

 

آپ چاہے ہوس کہیں ہم تو

یہ دوا کچھ گرام لیتے ہیں

 

گرنے لگتا ہے جب کوئی منظر

آپ آنکھوں سے تھام لیتے ہیں

 

ہمسفر وہ پری صفت ہے عظیم

ساتھ کوئی غلام لیتے ہیں

عظیم کامل ۔۔

Azeem Kamil

Also read : Baad me ja kr sher sunata hun  | Azeem Kamil

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *