Poetry

Hawa ka samna karna parhe ga | Azeem Kamil

Spread the love

ہَوا کا سامنا کرنا پڑے گا

دِیے کو حوصلہ کرنا پڑے گا

 

مرے مالک اگر تو بھی خفا ہے

ترا سجدہ ادا کرنا پڑے گا

 

میں سب کچھ ہار تو بیٹھا ہوں تم پر

بتاؤ اور کیا کرنا پڑے گا

 

اگر دشمن پہ اتنا مہرباں ہوں

تمہارا بھی بھَلا کرنا پڑے گا

 

ہماری مہربانی کو نہ دیکھو

تمہیں دل بھی کھُلا کرنا پڑے گا

 

بہت اِترا رہا ہے آج کل تو

تجھے بے آسرا کرنا پڑے گا

 

عظیم اُس سے میں تنگ آیا ہوا ہوں

مجھے ہی فیصلہ کرنا پڑے گا

 

عظیم کامل

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *