Poetry

Kaho ge Shayari yaro | Azeem Kamil

Spread the love

کہو گے شاعری یارو

مگر ہے عاشقی یارو

 

جسے ہم کاٹ بیٹھے ہیں

یہی تھی زندگی یارو

 

خدا سے شکوے کرنا بھی

مری ہے بندگی یارو

 

کنارہ کس طرح ملتا

وہ اس کی آنکھ تھی یارو

 

مجھے محسوس ہوتی ہے

مری اپنی کمی یارو

 

دیوں کے کام آئے گی

ہوا کی خودسری یارو

 

محبت جان لیوا تھی

مگر کامل نے کی یارو

 

عظیم کامل

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *