Poetry

Dil se tujh ko nikalain kese hum | Azeem Kamil

Spread the love

دل سے تجھ کو نکالیں کیسے ہم

غم گلے سے لگالیں کیسے ہم

ہر گلی میں تو چور پھرتے ہیں

خود کو اتنا سبھالیں کیسے ہم

دل کی خواہش ہے تو ملے ہم کو

یہ خلش بھی مٹالیں کیسے ہم

شاعری تو بہانا ہے اے دوست

تیری محفل سجالیں کیسے ہم

تیرے در پرپڑے رہیں گے ہم

اپنی میت اٹھالیں کیسے ہم

بابا جانی خفا ہیں رشتے سے

تجھ کو اپنا بنالیں کیسے ہم

اب تو خوابوں میں آتی جاتی ہے

آنکھ تجھ سے ہٹالیں کیسے ہم

 

عظیم کامل…..

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *