NewsPakistanUrdu News

پانی کا بحران سنگین، تربیلا ڈیم اگلے چوبیس گھنٹوں میں ڈیڈ لیول تک پہنچ جائے گی

درياؤں میں پانی کل کے مقابلے میں اٹھارہ ہزار آٹھ سو کیوسک مزید کم ہوگیا، آئندہ دنوں میں صوبوں کے پانی کے حصے میں کمی آسکتی ہے، ارسا نے وارننگ جاری کر دی

Spread the love
KpkUpdates.com

پانی کا بحران سنگین، تربیلا ڈیم اگلے چوبیس گھنٹوں میں ڈیڈ لیول تک پہنچ جائے

درياؤں میں پانی کل کے مقابلے میں اٹھارہ ہزار آٹھ سو کیوسک مزید کم ہوگیا، تربیلا ڈیم اگلے چوبیس گھنٹوں میں ڈیڈ لیول تک پہنچ جائے گا،ارسا نے وارننگ جاری کر دی- تفصیلات کے مطابق انڈس ریور سسٹم اتھارٹی (ارسا) کا کہنا ہے کہ تربیلا ڈیم اگلے چوبیس گھنٹوں میں ڈیڈ لیول تک پہنچ سکتا ہے۔ ترجمان ارسا کے مطابق درياؤں میں پانی کل کے مقابلے میں اٹھارہ ہزار آٹھ سو کیوسک مزید کم ہوگیا ہے، آئندہ دنوں میں صوبوں کے پانی کے حصے میں کمی آسکتی ہے۔

ترجمان ارسا خالد رانا کے مطابق ارسا نے پانی کی صورت حال کا جائزہ لیا جس میں دیکھا گیا کہ درياؤں میں پانی کل کے مقابلے میں مزید (اٹھارہ ہزار آٹھ سو) کیو سک کم ہو گیا ہے ۔ پانی کی کمی کے معاملے پر سندھ اسمبلی میں آج بھی شور شرابہ ترجمان کے مطابق یہ بھی محسوس کیا گیا ہے کہ تربیلا ڈیم اگلے (چوبیس سے اڑتالیس ) گھنٹوں میں اپنے ڈیڈ لیول پر پہنچ سکتا ہے، ارساسمجھتا ہے کہ آنے والے دنوں میں صوبوں کے پانی کے حصہ میں کمی آ سکتی ہے۔

دوسری جانب دریائے سندھ میں پانی کی قلت بڑھنے لگی ہے اور سکھر بیراج انتظامیہ نے کاشت کاروں کو یکم جون تک چاول کی فصل کاشت نہ کرنے کی ہدایت کی ہے۔ حکام کے مطابق گڈو بیراج پر پانی کی قلت انتالیس فیصد اور سکھر بیراج پر چھتیس فیصد ہے۔ تربیلا اور منگلا میں پانی کی آمد سے زیادہ اخراج جاری ہے جبکہ منگلا سے سندھ کو آٹھ ہزار کیوسک پانی کی فراہمی بڑھا دی گئی ہے۔

اخراج پچاس ہزار کیوسک سے بڑھا کر اٹھاون ہزار کیوسک کر دیا گیا۔ ارسا نے پنجاب سے تعاون کی درخواست بھی کی کہ اس حوالے سے پنجاب کا محکمہ آبپاشی اپنے فیلڈ اسٹاف کو آگاہ کر دے۔ منگلا سے پانی کا اخراج بڑھانے سے تربیلا پر بوجھ کم ہوجائے گا اور ستائیس مئی تک پنجند سے نیچے کم ازکم پانچ ہزار کیوسک پانی جانے دیا جائے۔ یاد رہے کہ گذشتہ روز بھی ملک بھر میں پانی کے ذخیرے سے متعلق ارسا نے خبردار کیا تھا۔

انڈس ریور سسٹم اتھارٹی (ارسا) کے ترجمان خالد رانا کے مطابق ملک بھر کے ڈیموں میں پانی کا ذخیرہ سات سے آٹھ روز کا رہ گیا ہے۔ پانی کی دستیابی سے متعلق صورتحال تین سے چار روز میں واضح ہو گی تاہم یہ بتانا قبل از وقت ہو گا کہ ملک میں فصل خریف کو پانی کی کتنی قلت آ سکتی ہے۔ خالد رانا کا کہنا ہے کہ ڈیموں میں دس لاکھ ایکڑ فٹ سے زیادہ پانی موجود ہے جو سات سے آٹھ روز کے لیے کافی ہے۔

ارسا کی جانب سے الرٹ جاری ہونے کے بعد مسلم لیگ ق کے سینئیر رہنما مونس الٰہی نے بھی مائیکروبلاگنگ ویب سائٹ ٹویٹر پر اپنے پیغام میں کہا تھا کہ انتہائی تشویش ناک اطلاع ہے کہ ملک بھر کے ڈیموں میں صرف سات سے آٹھ دن کا پانی باقی رہ گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ دشمن کی اندھی تقلید میں کالا باغ ڈیم پر تنقید کرنے والو اب تو آنکھیں کھولو۔ اپنا نہیں تو اپنی آنے والی نسلوں کا سوچو۔ انہوں نے اپنے ٹویٹر پیغام میں کالا باغ ڈیم کی تعمیر کا نعرہ بھی لگایا اور کہا کہ کالا باغ ڈیم بناؤ ملک بچاؤ!

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *