NewsPakistanUncategorizedUrdu News

حکومت کا بجٹ میں موبائل کالز پر ایجوکیشن ٹیکس عائد کرنے سے انکار

Spread the love

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) وفاقی حکومت نے آئندہ مالی سال کے وفاقی بجٹ میں ٹیلیفون اور موبائل کالز پر ایک کال پر ایک روپے کی ایجوکیشن لیو عائد کرنے سے انکار کردیا ہے۔

سائنس اور ٹکنالوجی سے متعلق وزیر اعظم کی ٹاسک فورس کی تجویز کو حکومت نے مسترد کردیا۔ اس ضمن میں ، وزارت خزانہ کے ذرائع نے بتایا ہے کہ سائنس اور ٹکنالوجی اور ہائیر ایجوکیشن سے متعلق وزیر اعظم کی ٹاسک فورس کے سربراہ ڈاکٹر عطاء الرحمن نے مشورہ دیا تھا کہ اس پر ایک لاکھ روپے کی تعلیمی محصول وصول کی جائے۔ موبائل کالوں اور ٹیلیفون کالز پر 1 کال فی کال نافذ کی جائے۔ اور اس سے حاصل ہونے والی آمدنی کو اعلی تعلیم کے فروغ کے ساتھ ساتھ علم معیشت کے فروغ کے لئے بھی استعمال کیا جانا چاہئے۔

ذرائع نے بتایا کہ وزارت تعلیم سمیت دیگر اسٹیک ہولڈرز نے اس تجویز کی مخالفت کی اور وزیر اعظم نے بھی اس تجویز کو مسترد کردیا جس کی وجہ سے اسے بجٹ میں شامل نہیں کیا جا رہا ہے۔
ذرائع کا کہنا ہے کہ وزارت تعلیم نے موبائل فونز اور ٹیلیفون کالز پر ایک کال پر ایک روپے کی ایجوکیشن لیو عائد کرنے کی تجویز کی بھی مخالفت کی تھی۔


یہ بھی پڑھیں

ایپل کو لڑکی کی برہنہ تصاویر لیک کرنے پر لاکھوں ڈالر ہرجانہ ادا کرنا پڑ گیا

حکومت کا کاروباری مراکز ہفتے میں 2 کی بجائے ایک دن بند رکھنے کا فیصلہ

ملک میں بجلی کا شدید بحران اور لوڈ شیڈنگ، نیپرا کا نوٹس

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *