Poetry

یہ آخری ساعت شام کی ہے

Ahmed Faraz poetry

Spread the love

یہ آخری ساعت شام کی ہے

یہ شام جو ہے مہجوری کی

یہ شام اپنوں سے دوری کی

اس شام افق کے ہونٹوں پر

جو لالی ہے زہریلی ہے

اس شام نے میری آنکھوں سے

صہبائے طرب سب پی لی ہے

یہ شام غضب تنہائی کی

پت جھڑ کی ہوا برفیلی ہے

اس شام کی رنگت پیلی ہے

اس شام فقط آواز تری

کچھ ایسے سنائی دیتی ہے

آواز دکھائی دیتی ہے

یہ آخری ساعت شام کی ہے

یہ شام بھی تیرے نام کی ہے

ALSO READ:
مثال دست زلیخا تپاک چاہتا ہے

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *