Poetry

کتنا سمجھایا ، بات مانا ؟ نئیں اِس میں اب بھی قصور اُس کا نئیں

عظیم کامل کی مشہور غزلیں

Spread the love

کتنا سمجھایا ، بات مانا ؟ نئیں
اِس میں اب بھی قصور اُس کا نئیں

ہم بھلے جان سے چلے جائیں
دھوکہ بازی ہمارا شیوہ نئیں

تو جِسے چھو گیا وہ کھارا بھی
کھارا ہوتے ہوئے بھی کھارا نئیں

زندگی کھیل ہے جواری کا
سیدھے سادھوں کا یہ تماشا نئیں

اِتنا سادہ ہے کیسے بتلائیں
سجنے والا بھی اُس کے جیسا نئیں

عاشقی صبر بھی سکھاتی ہے
یہ محبت ہے کوئی دعوا نئیں

جان پر کھیل کر بناؤ کچھ
یہ تماشا کوئی تماشا نئیں
Kitna samjhaya bat mana ? Nai
Es main ab bhi qasour us ka nai ?

Hum bhalay jan say chaly jayen
Dhoka baazi hamara shewa nai

To jisay cho gya woh khara bhi
Khara hotay huway bhi khara nai

Zindgi khel hy juaari ka
Sedhay sadhon ka ye tamasha nai

Itna sada hay kesy batlayen
Sajnay wala bhi us ky jesa nai

Aashqi sabr bhi sikhati hay
Ye mohabat hay koi dawa nai

Jaan par kher kr bnao kuch
Ye tamasha koi tamasha nai

عظیم کامل

ALSO READ:
ہم کو اُلو نہیں بناؤ گے

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *