Poetry

دل گرفتہ ہی سہی بزم سجا لی جائے یاد جاناں سے کوئی شام نہ خالی جائے

Ahmed Faraz Ghazals

Spread the love

 

دل گرفتہ ہی سہی بزم سجا لی جائے

یاد جاناں سے کوئی شام نہ خالی جائے

رفتہ رفتہ یہی زنداں میں بدل جاتے ہیں

اب کسی شہر کی بنیاد نہ ڈالی جائے

مصحف رخ ہے کسی کا کہ بیاض حافظ

ایسے چہرے سے کبھی فال نکالی جائے

وہ مروت سے ملا ہے تو جھکا دوں گردن

میرے دشمن کا کوئی وار نہ خالی جائے

بے نوا شہر کا سایہ ہے مرے دل پہ فرازؔ

کس طرح سے مری آشفتہ خیالی جائے

ALSO READ:
رات کے پچھلے پہر رونے کے عادی روئے

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *