Poetry

کی حق سے فرشتوں نے اقبالؔ کی غمازی گستاخ ہے کرتا ہے فطرت کی حنا بندی

Spread the love

کی حق سے فرشتوں نے اقبالؔ کی غمازی
گستاخ ہے کرتا ہے فطرت کی حنا بندی

خاکی ہے مگر اس کے انداز ہیں افلاکی
رومی ہے نہ شامی ہے کاشی نہ سمرقندی

سکھلائی فرشتوں کو آدم کی تڑپ اس نے
آدم کو سکھاتا ہے آداب خداوندی

ALSO READ:
اک دانش نورانی اک دانش برہانی ہے دانش برہانی حیرت کی فراوانی

کوئی حاصل نہ تھا آرزو کا مگر سانحہ یہ ہے۔جون ایلیاء

سوچتا ہوں کے اس کی یاد آخر،جون ایلیاء

خودی ہو علم سے محکم تو غیرت جبریل اگر ہو عشق سے محکم تو صور اسرافیل

محنت کبھی رائیگاں نہیں جاتی | ولید رمضان

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *