Poetry

لا کر برہمنوں کو سياست کے پيچ ميں زناريوں کو دير کہن سے نکال دو

Allama Iqbal Urdu ghazal

Spread the love

لا کر برہمنوں کو سياست کے پيچ ميں
زناريوں کو دير کہن سے نکال دو

وہ فاقہ کش کہ موت سے ڈرتا نہيں ذرا
روح محمد اس کے بدن سے نکال دو

فکر عرب کو دے کے فرنگي تخيلات
اسلام کو حجاز و يمن سے نکال دو

افغانيوں کي غيرت ديں کا ہے يہ علاج
ملا کو ان کے کوہ و دمن سے نکال دو

اہل حرم سے ان کي روايات چھين لو
آہو کو مرغزار ختن سے نکال دو

اقبال کے نفس سے ہے لالے کي آگ تيز
ايسے غزل سرا کو چمن سے نکال دو

ALSO READ
پوچھ اس سے کہ مقبول ہے فطرت کی گواہی تو صاحب منزل ہے کہ بھٹکا ہوا راہی

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *