Poetry

ہر چیز ہے محو خودنمائی ہر ذرہ شہید کبریائی

Allama Iqbal Urdu ghazal

Spread the love

ہر چیز ہے محو خودنمائی
ہر ذرہ شہید کبریائی

بے ذوق نمود زندگی موت
تعمیر خودی میں ہے خدائی

رائی زور خودی سے پربت
پربت ضعف خودی سے رائی

تارے آوارہ و کم آمیز
تقدیر وجود ہے جدائی

یہ پچھلے پہر کا زرد رو چاند
بے راز و نیاز آشنائی

تیری قندیل ہے ترا دل
تو آپ ہے اپنی روشنائی

اک تو ہےکہ حق ہے اس جہاں میں
باقی ہے نمود سیمیائی

ہیں عقدہ کشا یہ خار صحرا
کم کر گلۂ برہنہ پائی

ALSO READ:
لا کر برہمنوں کو سياست کے پيچ ميں زناريوں کو دير کہن سے نکال دو

پوچھ اس سے کہ مقبول ہے فطرت کی گواہی تو صاحب منزل ہے کہ بھٹکا ہوا راہی

خرد نے مجھ کو عطا کی نظر حکیمانہ سکھائی عشق نے مجھ کو حدیث رندانہ

مجھے آہ و فغان نیم شب کا پھر پیام آیا تھم اے رہ رو کہ شاید پھر کوئی مشکل مقام آیا

عشق سے پیدا نوائے زندگی میں زیر و بم عشق سے مٹی کی تصویروں میں سوز دمبدم

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *