InternationalNews

مصر میں فرعونِ سوم کے وزیرِ خزانہ کا مقبرہ دریافت

Spread the love

قاہرہ: مصری ماہرین آثار قدیمہ نے اعلان کیا ہے کہ انہوں نے سقرہ کے علاقے میں قدیم مصر کے تیسرے فرعون رمیسس دوئم کا مقبرہ دریافت کیا ہے۔

مصری وزارت سیاحت اور آثار قدیمہ نے ایک بیان میں اس اہم دریافت کا اعلان کیا ہے۔ کہا جاتا ہے کہ اس دریافت نے جہاں قدیم مصر سے متعلق اہم دریافتیں ہو چکی ہیں وہاں سقرہ کی اہمیت میں مزید اضافہ کر دیا ہے۔

اس سے قبل سقرہ میں فرعون سے تعلق رکھنے والی کئی اہم شخصیات کے مقبرے اور ممیاں مل چکی ہیں جن میں ہور محب نامی فوجی رہنما بھی شامل ہے۔

ماہرین کے مطابق اس جگہ سے کئی بڑے تابوت، قبرستان اور مقبرے بھی دریافت ہوئے ہیں، جنہیں قدیم مصری تاریخ کو نئے سرے سے دیکھنا ہوگا۔

 

رمسیس دوم کو ماہرین 1279 سے 1213 قبل مسیح تک مصر پر حکمرانی کرنے والا تیسرا فرعون مانتے ہیں، جو سب سے طویل دور حکومت ہے۔ یہ قاہرہ سے 20 میل کے فاصلے پر ہے۔ صقرہ میں طحہ ام ویہ نامی جگہ سے وزیر خزانہ کے آثار ملے ہیں۔

مصری ماہر ڈاکٹر مصطفیٰ وزیری نے بتایا کہ فرعون کے وزیر کو خطوط لکھنے کے علاوہ وہ مویشیوں کا بھی انچارج تھا۔

 

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button