NewsPakistanUrdu News

سعودی ولی عہد کے حکم پر کرپشن الزامات پر 172 اہم شخصیات گرفتار

Spread the love

ریاض: سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کی جنرل پریذیڈنسی، دفاع اور دفاع کی ذمہ داریاں 172 اہم عدالتی احکامات پر آٹھ وزارتوں کے خلاف بڑی کارروائی عمل میں آئیں۔

سعودی میڈیا کے مطابق آپ کے خلاف تحقیقات کرنے والے نیشنل پارٹی کے کمیشن ’نزہ‘ نے جنرل پریذیڈنسی، کانٹی نینٹل گارڈ، وزارت دفاع، پبلک اینڈ ہیلتھ پروٹیکشن کے دفاتر کا معائنہ کیا ہے۔

نزہ کے مطابق 6 ہزار سے پہلے دفاتر میں 512 کیسز کی چھان بین کی گئی جس کی روشنی میں 172 افراد کو امانت داری، طاقت کے استعمال اور غبن کے الزام میں گرفتار کیا گیا۔

خود مختار سلمان کے سربراہ نے مزید کہا کہ ان کی گرفتاری ولی محمد نے ملک سے اپنی وابستگی کے تحت کی تھی۔

واضح رہے کہ سعودی عرب میں ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان سے فائدہ اٹھانے اور کئی شہزادوں کے خلاف اہم حکومتی پالیسی کو ان کے عہدیداروں کی ذمہ داری میں نافذ کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

Riyadh: Saudi Crown Prince Mohammed bin Salman’s responsibility for the General Presidency, Defense and Defense came into effect in a major operation against eight ministries on 172 important court orders.

According to Saudi media, the National Party’s commission “Nizah”, which is investigating against you, has inspected the offices of the General Presidency, Continental Guard, Ministry of Defense, Public and Health Protection.

According to Nizah, 512 cases have been investigated in the offices before 6,000, in the light of which 172 people have been arrested for trust, use of force and embezzlement.

Sovereign Salman’s chief added that his arrest was made by Wali Muhammad as part of his own commitment to the country.

It should be noted that in Saudi Arabia, it has been decided to take advantage of the Crown Prince of Muhammad bin Salman and implement the important government policy against several princes under the responsibility of his officials.

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button