Poetry

آنکھوں سے مری اس لیے لالی نہیں جاتی

Wasi Shah Poetry Collection

Spread the love

آنکھوں سے مری اس لیے لالی نہیں جاتی
یادوں سے کوئی رات جو خالی نہیں جاتی

اب عمر نہ موسم نہ وہ رستے کہ وہ پلٹے
اس دل کی مگر خام خیالی نہیں جاتی

مانگے تو اگر جان بھی ہنس کے تجھے دے دیں
تیری تو کوئی بات بھی ٹالی نہیں جاتی

آئے کوئی آ کر یہ ترے درد سنبھالے
ہم سے تو یہ جاگیر سنبھالی نہیں جاتی

معلوم ہمیں بھی ہیں بہت سے ترے قصے
پر بات تری ہم سے اچھالی نہیں جاتی

ہم راہ ترے پھول کھلاتی تھی جو دل میں
اب شام وہی درد سے خالی نہیں جاتی

ہم جان سے جائیں گے تبھی بات بنے گی
تم سے تو کوئی راہ نکالی نہیں جاتی

.:: ALSO READ یہ بھی پڑھیں ::.
باندھ لیں ہاتھ پہ سینے پہ سجا لیں تم کو

تم مری آنکھ کے تیور نہ بھلا پاؤ گے

URDU 2 LINE POETRY COLLECTION | URDU POETRY

صرف زندہ رہے تو ہم مر جائیں گے٫جون ایلیاء

دل مردہ دل نہيں ہے،اسے زندہ کر دوبارہ کہ يہي ہے امتوں کے مرض کہن کا چارہ

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button