InternationalNewsUrdu NewsWomen News

سعودی خواتین اب تیز رفتار ’’حرمین ایکسپریس ٹرین‘‘ چلائیں گی

Spread the love

ریاض: سعودی خواتین جلد ہی مقدس شہروں مکہ مکرمہ اور مدینہ منورہ کے درمیان تیز رفتار حرمین ایکسپریس ٹرین چلانے کی ذمہ داری سنبھالیں گی۔

عرب نیوز کے مطابق ریاض کی حرمین ایکسپریس ٹرین 12 ماہ میں تقریباً 60 ملین مسافروں کو لے جا سکے گی۔

سعودی ریلوے پولی ٹیکنک نے اعلان کیا ہے کہ اس نے حرمین ایکسپریس ٹرین لیڈرز پروگرام میں تربیت کے لیے سعودی خواتین کی رجسٹریشن کھول دی ہے۔
مزید پڑھیں: سعودی عرب میں خواتین کو تنہا اور آزادی سے رہنے کی اجازت ہے۔

خواتین گریجویٹ ان مرد ہم منصبوں کے ساتھ کام کریں گی جنہوں نے پچھلے پروگراموں سے گریجویشن کیا ہے۔

ایس آر پی کے جنرل منیجر عبدالعزیز الصغیر نے کہا کہ تربیتی پروگرام 15 فروری کو جدہ میں شروع ہوگا اور اس میں ریل پروجیکٹ سے متعلق کام کی جگہ پر عملی تربیت بھی شامل ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ سعودی خواتین حرمین سروس کی زیادہ مانگ کے بعد مزید اہل ڈرائیوروں کی ضرورت کو پورا کرنے میں مدد کریں گی۔

تربیت یافتہ افراد کو تربیتی مدت کے دوران ماہانہ 1,065 سعودی ریال کا بونس ملے گا اور وہ سوشل انشورنس اسکیم میں بطور ٹرینی ملازم رجسٹرڈ ہوں گے، جبکہ خواتین کو گریجویشن کے بعد 8,000 ریال تک ماہانہ تنخواہ ملے گی۔ ۔

مزید پڑھیں: سعودی عرب میں حقوق نسواں کی کارکن کو 5 سال قید

ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان نے عہدہ سنبھالنے کے بعد کئی تاریخی اور غیر معمولی اقدامات کیے ہیں، جن میں ویژن 2023 کے تحت خواتین کو بااختیار بنانا بھی شامل ہے، جس کے بعد خواتین کو گاڑی چلانے، کام کرنے، کھیلوں میں حصہ لینے اور بیرون ملک تنہا سفر کرنے کی اجازت دی گئی ہے۔

واضح رہے کہ سعودی عرب میں ایک خاتون کو اپنے ایک مرد رشتہ دار کے ساتھ رہنا پڑا۔ اسی طرح باپ یا شوہر، چچا، بھائی یا حتیٰ کہ بیٹے کی اجازت کے بغیر شادی کرنا، پاسپورٹ بنوانا یا بیرون ملک سفر کرنا ناممکن تھا۔

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button