NewsPakistanUrdu News

نواز شریف سے ڈیل کی باتیں بے بنیاد ہیں، ڈی جی آئی ایس پی آر

Spread the love

راولپنڈی:
ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل بابر افتخار نے کہا ہے کہ نواز شریف سے مذاکرات بے بنیاد ہیں جب کہ کالعدم تحریک طالبان پاکستان کے ساتھ جنگ ​​بندی 9 دسمبر کو ختم ہوئی اور اب ان کے خلاف آپریشن جاری ہے۔ ۔

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے ڈائریکٹر جنرل میجر جنرل بابر افتخار نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ آج 2021 کی صورتحال کا جائزہ لینے کا وقت ہے، 2021 میں مغربی سرحد پر صورتحال تشویشناک تھی، افغانستان سے غیر ملکی افواج کے انخلاء کا اثر ہوا ہے۔ پاکستان کی سلامتی پر بارڈر مینجمنٹ کے تحت پاک افغان سرحد پر باڑ لگانے کا کام 94 فیصد مکمل ہو چکا ہے۔ ہاں باڑ کا مقصد دونوں طرف کے لوگوں کو تقسیم کرنا نہیں بلکہ انہیں محفوظ بنانا ہے۔

افغان صورتحال سنگین انسانی المیے کو جنم دے سکتی ہے۔

میجر جنرل بابر افتخار نے کہا کہ افغانستان کی صورتحال کے اثرات پاکستان پر بھی پڑ سکتے ہیں، موجودہ صورتحال سنگین انسانی المیے کو جنم دے سکتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ 2021 میں پاکستان کی سیکیورٹی فورسز نے دہشت گرد تنظیموں کا صفایا کردیا، انٹیلی جنس ایجنسیوں نے 890 تھریٹ الرٹ جاری کیے اور 70 فیصد ممکنہ دہشت گردی کے واقعات کو روکنے میں مدد کی۔

بھارت مذہبی انتہا پسندی کا شکار ہے۔

ڈی جی آئی ایس پی آر نے کہا کہ 2021 میں ایل او سی پورا سال پرامن رہی، بھارتی فوج دہشت گردی کے نام پر مظلوم کشمیریوں کو شہید کر رہی ہے، بھارت نے ایل او سی کے ارد گرد اور مقبوضہ کشمیر میں رہنے والوں کو شہید کیا ہے۔ بدترین ریاستی مظالم سے توجہ ہٹانا چاہتے ہیں، بھارت اندرونی مذہبی انتہا پسندی کا شکار ہے، بھارتی عسکری قیادت کے منفی اور جھوٹے پروپیگنڈے کا شکار ہے۔

کسی بھی مسلح گروہ کو قانون اپنے ہاتھ میں لینے کی اجازت نہیں دی جا سکتی

ڈی جی آئی ایس پی آر نے کہا کہ پاکستان میں کسی مسلح فرد یا گروہ کو قانون اپنے ہاتھ میں لینے کی اجازت نہیں دی جا سکتی۔ طاقت کا استعمال صرف ریاست کا اختیار تھا۔ جن علاقوں میں آپریشن کیے گئے وہاں حالات معمول پر آ رہے ہیں۔

بیرون ملک سے اداروں کے خلاف منظم مہم چلائی جا رہی ہے۔

میجر جنرل بابر افتخار نے کہا کہ کچھ عرصے سے پاکستان کے مختلف اداروں اور شخصیات کے خلاف ایک منظم مہم چلائی جا رہی ہے جس کا مقصد حکومت، عوام، اداروں اور افواج کے درمیان خلیج پیدا کرنا اور عوام کے اعتماد کو ٹھیس پہنچانا ہے۔ اداروں تمام سرگرمیوں سے آگاہ ہیں لیکن ان لوگوں کی کڑیاں بھی جانتے ہیں جو ملک اور بیرون ملک یہ کام کر رہے ہیں وہ پہلے بھی کر چکے ہیں اور اب بھی ناکام ہوں گے۔

پاک فوج کے ترجمان نے کہا کہ اس پراپیگنڈے کو روکنے اور ملوث عناصر کو انصاف کے کٹہرے میں لانے کے لیے اجتماعی کارروائی کی ضرورت ہے اور قانون کے اندر رہتے ہوئے قوانین کی ضرورت ہے۔ حکومت اس سلسلے میں اقدامات کر رہی تھی انفرادی سطح پر روک کر قانون سازی کی ضرورت ہے۔

نواز شریف کے ساتھ ڈیل کی باتیں سب قیاس آرائیاں ہیں۔

ڈیل سے متعلق نواز شریف کے سوال کے جواب میں ڈی جی آئی ایس پی آر نے کہا کہ نواز شریف سے متعلق تمام قیاس آرائیاں بے بنیاد ہیں۔ ثبوت کیا ہیں، مذاکرات کون کر رہا ہے، مقاصد کیا ہیں، حقیقت میں ایسی کوئی بات نہیں، اللہ کا شکر ہے کہ سول ملٹری تعلقات میں کوئی مسئلہ نہیں، شام کو ٹی وی پروگرام میں بات ہوتی ہے، اسٹیبلشمنٹ نے یہ کیا براہ کرم اسٹیبلشمنٹ کو اس بحث سے دور رکھیں۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ آرمی چیف کی مدت ملازمت کے بارے میں کوئی قیاس آرائی نہیں ہونی چاہیے۔

کراچی میں امن

پاک فوج کے ترجمان نے کہا کہ کراچی میں بھتہ خوری، اغوا برائے تاوان، ٹارگٹ کلنگ اور اسٹریٹ کرائمز کی شرح میں نمایاں کمی آئی ہے۔ نیشنل ایکشن پلان کے تحت کراچی میں 78 آپریشن کیے گئے۔

ٹی ٹی پی کے خلاف آپریشن

ڈی جی آئی ایس پی آر کا کہنا تھا کہ کالعدم تحریک طالبان پاکستان کے ساتھ جنگ ​​بندی 9 دسمبر کو ختم ہو گئی تھی، ٹی ٹی پی کے خلاف آپریشن جاری ہے اور ابھی کوئی بات چیت نہیں ہو رہی۔ پاکستان میں داعش کی کوئی موجودگی نہیں ہے۔

.:::ALSO READ:::.

نواز شریف سے ڈیل کی باتیں بے بنیاد ہیں، ڈی جی آئی ایس پی آر

انکشافات اور ثبوت عمران خان سمیت پی ٹی آئی کو فارغ کرنے کیلیے کافی ہیں، مریم نواز

عدنان صدیقی کی سیلفی 2022ء کی پہلی وائرل میم بن گئی

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button