Poetry

تم ثروت کو پڑھتی ہو

Ali Zaryoun Poetry Collection

Spread the love

تم ثروت کو پڑھتی ہو
کتنی اچھی لڑکی ہو

بات نہیں سنتی ہو کیوں
غزلیں بھی تو سنتی ہو

کیا رشتہ ہے شاموں سے
سورج کی کیا لگتی ہو

لوگ نہیں ڈرتے رب سے
تم لوگوں سے ڈرتی ہو

میں تو جیتا ہوں تم میں
تم کیوں مجھ پہ مرتی ہو

آدم اور سدھر جائے
تم بھی حد ہی کرتی ہو

کس نے جینس کری ممنوع
پہنو اچھی لگتی ہو

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button